imran-khan-ijlas 13

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت غربت کے خاتمے اوراس سے متعلقہ دیگر اصلاحات کے بارے میں اجلاس

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت غربت کے خاتمے اوراس سے متعلقہ دیگر اصلاحات کے بارے میں اجلاس

٭ اجلاس میں وزیرخزانہ اسد عمر ، وزیر منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، مشیر برائے اسٹیبلشمنٹ محمد شہزاد ارباب ،چیئرپرسن بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ڈاکٹر ثانیہ نشتر،ایم ڈی بیت المال عون عباس بپی،سی ای او این آر ایس پی ڈاکٹر رشید باجوہ ، سی ای او پاکستان پاورٹی ایلیوی ایشن فنڈقاضی عصمت عیسیٰ، سی ای او پاکستان مائیکرو انوسٹمنٹ کمپنی یاسر اشفاق اور دیگر اعلیٰ حکام کی شرکت۔

٭ اجلاس میں غربت کے خاتمے اور دیگر متعلقہ اقدامات اور اصلاحات کے بارے میں وزیراعظم کو بریفنگ۔جامع اور مربوط حکمت عملی پر غور۔

٭ فنی تعلیم کی ترویج ، روزگار کے مواقع میں اضافہ،مالی امدادتک رسائی،سستی رہائش ،سماجی تحفظ اور صحت انصاف کارڈکے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

٭ اسٹنٹڈ گروتھ صحت کے شعبے میں سب سے اہم مسئلہ ہے۔جو ہمارے بچوں کو ترقی کے مساوی مواقع سے محروم کردے گا۔اس حوالے سے فوری اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔وزیراعظم

٭ بریفنگ میں بتایا گیا کہ اسٹنٹڈ گروتھ کی وجہ سے ملکی معیشت کی جی ڈی پی میں سالانہ 3فیصدنقصان اٹھانا پڑتا ہے۔بلوچستان اور سابقہ فاٹا کے علاقے سب سے زیادہ متاثر ہیں۔شرکاءکو بتایا گیا کہ غربت اور اسٹنٹنگ میں براہ راست تعلق ہے۔

٭ پی ٹی آئی حکومت غربت کے خاتمے کوصرف مالی امداد تک محدود نہیں رکھنا چاہتی بلکہ دیگر شعبوں میں اصلاحات اور روزگار کے مواقع فراہم کرکے ایک پائیدار حل چاہتی ہے۔وزیراعظم

٭ اسٹنٹڈ گروتھ کے حل کے لیے صحت ، تعلیم،خوراک،ماحولیات اوردیگر متعلقہ شعبوں میں ہم آہنگی کی ضرورت ہے۔وزیراعظم

٭ غربت کے خاتمے کے لیے نچلی سطح پر لوکل گورنمنٹ کے نظام کو استعمال کیا جائے تاکہ ضرورتمندوں تک پہنچا جا سکے او ر اخراجات کا ضیاع نہ ہو ۔وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت غربت کے خاتمہ اوراس سے متعلقہ دیگر اصلاحات کے بارے اجلاس
اسلام آباد ۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت غربت کے خاتمہ کو صرف مالی امداد تک محدود نہیں رکھنا چاہتی بلکہ دیگر شعبوں میں اصلاحات اور روزگار کے مواقع فراہم کرکے ایک پائیدار حل چاہتی ہے، اسٹنٹڈ گروتھ کے مسئلہ حل کےلئے صحت ، تعلیم، خوراک، ماحولیات اور دیگر متعلقہ شعبوں میں ہم آہنگی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے یہ بات بدھ کو غربت کے خاتمہ اوراس سے متعلقہ دیگر اصلاحات کے بارے میں اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں وزیر خزانہ اسد عمر ، وزیر منصوبہ بندی و ترقی مخدوم خسرو بختیار، مشیر برائے اسٹیبلشمنٹ محمد شہزاد ارباب، چیئرپرسن بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ڈاکٹر ثانیہ نشتر، ایم ڈی بیت المال عون عباس بپی، این آر ایس پی کے سی ای او ڈاکٹر راشد باجوہ، سی ای او پاکستان پاورٹی ایلیوی ایشن فنڈ قاضی عصمت عیسیٰ، سی ای او پاکستان مائیکرو انوسٹمنٹ کمپنی یاسر اشفاق اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں غربت کے خاتمہ اور دیگر متعلقہ اقدامات اور اصلاحات کے بارے میں وزیراعظم کو بریفنگ دی گئی اور اس ضمن میں جامع اور مربوط حکمت عملی پر غور کیا گیا۔ شرکاءکو فنی تعلیم کی ترویج ، روزگار کے مواقع میں اضافہ،مالی امدادتک رسائی،سستی رہائش ،سماجی تحفظ اور صحت انصاف کارڈکے حوالے سے بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔
وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت غربت کے خاتمے اوراس سے متعلقہ دیگر اصلاحات کے بارے میں اجلاس

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں